History of Alcohol in Islam and Quran

History-of-Alcohol-in-Islam-and-Quran

شراب کیسے حرام ہوئی

اسلام کے ابتدائی دور میں جب شراب حرام نہیں هوئی تهی تو اکثر لوگ شراب پیتے تهے , شراب زیاده پینے سے نشه هوجاتا هے, نشے کی حالت میں انسان کو اپنی چال ڈهال, گفتگو اور الفاظ پر کنٹرول نہیں رهتا ، اسے پته نہیں چلتا که وه کیا کہہ رها هے اور کیا کر رها هے؟
صحیح بخاری کی روایت هے که ایک دفعه ایک صحابی نشے کی حالت میں نماز پڑها رهے تهے, (اس وقت نشه حرام نہیں کیا گیا تها) سوره الکافرون کی تلاوت نماز میں کی تو “لا اعبد” کی بجائے “اعبد” پڑھ گئے۔ جس سے آیت کریمه کا مفهوم الٹ گیا, اس پر قرآن کریم میں حکم اترا کہ:
“يَا أَيُّهَا الَّذِينَ آمَنُوا لا تَقْرَبُوا الصَّلاةَ وَأَنْتُمْ سُكَارَى حَتَّى تَعْلَمُوا مَا تَقُولُونَ”. (النساء/43)
اے ایمان والو! جب تم نشے کی حالت میں هو تو تم نماز کے قریب تک نه جاؤ جب تک (اس ذهنی کیفیت میں واپس نه آجاؤ کہ) تم جو کچھ پڑھ رهے هو اس کا تمهیں (خود بهی) علم هو.
اس حوالے سے یه عرض کرنا چاهتا هوں که نماز میں جو کچھ هم پڑهتے هیں اس کا همیں علم هونا چاهئے که هم کیا پڑھ رهے هیں اور کیا کہہ رهے هیں؟ نماز الله تعالی کے ساتھ مناجات کا نام هے جس کا طریقه کار متعین هے اور اس کے آداب وشرائط طے شده هیں, هم وضو کرکے پاک جسم اور پاک کپڑوں کے ساتھ پاک جگه قبله رخ هوکر نماز کی نیت کرکے الله تعالی کے حضور میں کهڑے هوتے هیں اور تکبیر تحریمه (الله اکبر) کہہ کر ساری دنیا سے تعلق کو منقطع کرکے تهوڑی دیر کے لئے الله تعالی کے ساتھ گفتگو میں مصروف هوجاتے هیں, کهڑے بیٹهے سجدے میں پڑے، هاتھ باندھ کر، هاتھ چهوڑ کر اور مختلف کیفیات میں اپنے خالق ومالک سے باتیں کرتے چلے جاتے هیں لیکن سوچنے کی بات هے که کیا همیں علم هوتا هے که هم کیا کچھ کہہ رهے هیں؟
عجیب سا معامله هے که قرآن کریم میں الله تعالی هم سے باتیں کرتے هیں اور هم اپنی زبان سے ان باتوں کو دهراتے هیں جبکه نماز میں هم الله تعالی سے باتیں کرتے هیں لیکن نا اُس کی باتیں سمجهتے هیں اور نا هی اپنی باتیں هماری سمجھ کے دائرے میں هوتی هیں, همیں کچھ پته نہیں چلتا که الله تعالی هم سے کیا فرمارهے هیں اور نا هی یه معلوم هوتا هے که هم الله تعالی سے کیا کہہ رهے هیں ؟؟؟
سوچئے. کہیں ایسا تو نہیں که هم نشه کئے بنا حکما نشے کی حالت میں هیں…؟؟
الله تعالی سب کو قران کریم ترجمہ کے ساتھ سیکھنے اور اس پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے. آمین.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *